26

امسال وفاق کا ترقیاتی بجٹ کھربوں میں

اسلام آباد۔وفاقی حکومت کی جانب سے وفاقی ترقیاتی بجٹ 1000ارب روپے تک مختص کیے جانے کا امکان ہے۔آئندہ مالی سال سی پیک میں شامل گوادر انٹرنیشنل ایئرپورٹ، دیامیر بھاشا ڈیم، گوادر ایسٹ بے ایکسپریس وے، حویلیاں ڈرائی پورٹ سمیت وزیر اعظم کے خصوصی پروگراموں کے تحت اہم منصوبے وفاقی ترقیاتی پروگرام میں شامل کیے جانے کا امکان ہے۔ ترقیاتی منصوبوں کو حتمی شکل دینے کے لیے آئندہ ہفتے سالانہ منصوبہ بندی رابطہ کمیٹی ( اے پی سی سی)میں پیش کیا جائے گا۔نجی ٹی وی ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال میں اپنے تعین کردہ اہداف کے حصول اور اہم منصوبوں کی تکمیل کے لیے وفاقی بجٹ 1000ارب روپے سے زائدرکھنے کی تجویز زیر غور ہے جبکہ صوبائی ترقیاتی بجٹ 1ہزار 150ارب روپے کے لگ بھگ متوقع ہے۔

آئندہ مالی سال میں وفاقی حکومت کی جانب سے توانائی شعبے کے لیے 115ارب روپے سے زائد رقم مختص کیے جانے کی توقع ہے جبکہ چائنا پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت انفرااسٹرکچر کے منصوبوں کے لیے این ایچ اے کی جانب سے 500ارب روپے مانگے گئے تھے تاہم ذرائع کاکہنا ہے کہ نیشنل ہائی وے اتھارٹی(این ایچ اے)کے لیے وفاقی ترقیاتی بجٹ میں 150ارب روپے تک مختص کیے جائیں گے۔ اسی طرح وزیر اعظم یوتھ پروگرام کے لیے 20ارب روپے، خصوصی ترقیاتی پروگراموں کے لیے 28سے30ارب روپے رکھے جانے کا امکان ہے۔

علاوہ ازیں آئندہ مالی سال حکومت کے ترقیاتی پروگرام کے تحت چائنا کی فنانسنگ سے دیا میر بھا شا ڈیم منصوبے پر بھی کام شروع کیا جانے کا امکان ہے۔ اسی طرح چائنا پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت گوادر ایئرپورٹ، گوادر ایسٹ بے ایکسپریس وے، حویلیاں ڈرائی پورٹ منصوبے پر بھی کام شروع کیا جائے گا۔ حکومت کی جانب سے آئندہ مالی سال کے ترقیاتی بجٹ میں توانائی سیکٹر اور انفرااسٹرکچر کے لیے زیا دہ رقم مختص کیے جانے کا امکان ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں