پاکستان کو 4ممالک کیساتھ تجارت میں بھاری خسارہ

اسلام آباد۔پاکستان کو امریکا ، چین ، قطر و سعودیہ سے تجارت میں بھاری خسارے کا سامنا۔رواں مالی سال کے پہلے دس ماہ کے دوران باہمی تجارت میں 7ارب 12کروڑ 80لاکھ ڈالر کا خسارہ برداشت کرنا پڑا، 5ارب 8کروڑ 60لاکھ ڈالر کی بر آمدات ، در آمدات12 ارب 21کروڑ 40لاکھ ڈالر کی سطح پر رہیں۔ سٹیٹ بینک کے مطابق رواں مالی سال کے ابتدائی دس ماہ کے دوران ملکی تجارت کو محض 4ممالک کے ساتھ باہمی تجارت میں 7.12ارب ڈالر کا خسارہ دیکھنے میں آیا ہے ۔

سٹیٹ بینک آف پاکستان کے اعداد وشمار کے مطابق جولائی 2016تا اپریل 2017کے دوران 10ماہ کے دوران پاکستا ن کو چین،امریکا ، قطر اور سعودی عرب کے ساتھ باہمی تجارت میں 7ارب 12کروڑ 80لاکھ ڈالرز کا خسارہ برداشت کرنا پڑا، اعداد وشمار کے مطابق ان دس ماہ کے دوران پاکستان نے مذکورہ ممالک کو5ارب8کروڑ 60لاکھ ڈالر کی بر آمدات کیں جبکہ پاکستان کی در آمدات 12ارب 21کروڑ 40لاکھ ڈالر کی سطح پر رہیں ۔سٹیٹ بینک کے مطابق پاکستان نے اس دوران سب سے زیادہ در آمدات چین سے کیں جو کہ 7ارب 80کروڑ ڈالر کی سطح پر رہیں ،سعودی عرب سے پاکستانی درآمدات کا حجم ایک ارب 90کروڑ ڈالر ، امریکا سے ایک ارب 65کروڑ ڈالر جبکہ قطر سے 86کروڑ 40لاکھ ڈالر کی در آمدات کی گئیں ۔

پاکستان سے اس دوران سب سے زیادہ بر آمدات امریکا کو کی گئیں جو کہ 3ارب ڈالر سے کچھ زائد رہیں ، چین کو ایک ارب 36کروڑ ڈالرمالیت کی اشیا بر آمد کی گئیں ، قطر کو 42کروڑ 60لاکھ ڈالرجبکہ سعودی عرب کو 30کروڑ ڈالر کی بر آمدات ریکارڈ کی گئیں۔پاکستان کا قطر سے در آمدی حجم زیادہ تر ایل این جی پر محیط رہا اور پاکستان 15سالہ معاہدے کی بنا پر قطر سے ایل این جی در آمد کررہا ہے ، چین سے مشینری اور دیگر آلات کی در آمد نمایاں رہی جبکہ بر آمدات کے حوالے سے پاکستان سے امریکا کو ٹیکسٹائل مصنوعات کی بر آمد نمایاں رہی۔