21

چترال میں 3روزہ فیسٹیول کا آغاز

پشاور۔ سینئر صوبائی وزیربرائے سیاحت، کھیل، آثارقدیمہ، میوزیم و امور نوجوانان محمد عاطف خان کی ہدایت پر چترال میں شروع ہونے والے تاریخی اوچاؤ فیسٹیول کاآغاز ہو گیا، چترال کی تاریخی اور قدیم وادی کیلاش کا صدیوں پرانا اوچاؤ فیسٹیول وادی بمبوریت اور وادی رمبور کیلاش میں ہر سال منایا جاتا ہے، 20 اگست سے شروع ہونے والے اس فیسٹیول میں کیلاش قبیلے کے لوگ، گندم کی فصل کی کٹائی سمیت اپنے عزیزرشتہ داروں اور سیاحوں میں مکھن اور دیگر کھانے پینے کی اشیاء تقسیم کرتے ہیں۔

جبکہ اس کے ساتھ ہی کیلاش قبیلے کے نوجوان مرد و خواتین وادی رمبور کے رسمی ہال میں جمع ہوتے ہیں اور اپنا روایتی رقص کرتے ہیں۔3 روزہ فیسٹیول کیلئے ملکی اور غیرملکی سیاحوں کی کثیر تعداد نے چترال اور کیلاش وادی کا رخ کرنا شروع کردیا ہے اور تاریخی تہوار سے لطف اندوز ہونے کیلئے اب تک کثیر تعداد میں غیر ملکی سیاح وادی پہنچ چکے ہیں،تفصیلات کے مطابق فیسٹیول میں کیلاش قبیلے کے عوام موسم گرما کی سخت دھوپ میں گندم کی فصل کی کٹائی کرکے اسے نیچے آبادی میں لاتے ہیں جس کے ساتھ چرواہوں کو بھی ساتھ لایا جاتا ہے تاہم اس کیساتھ ساتھ وہ مکھن بھی لاتے ہیں جس کو بعد میں اپنے ہمسایوں،رشتہ داروں اوروادی میں آئے ہوئے ملکی وغیر ملکی سیاحوں میں خوشی کے طور پر تقسیم کرتے ہیں۔

ہرسال منایا جانے والا اوچاؤ فیسٹیول اگست کے مہینے میں کیلاش کی وادی بمبوریت سمیت انیش، برون اور کراکل وادی کے چھوٹے گاؤں میں بھی منایا جاتا ہے، تاہم سب سے بڑا میلہ بمبوریت میں سجتا ہے، فیسٹیول میں آج 21 اگست کووادی رمبورمیں نوجوان مرد وخواتین ڈانسنگ ہال میں جمع ہونگے جبکہ پہاڑی علاقوں سے لایا ہوا مکھن وہاں ہمسایوں اور سیاحوں میں تقسیم کیا جائے گاجبکہ اس کے بعدخوشی میں رقص کی محفل منعقد ہوگی،فیسٹیول میں کل22اگست کی رات کودیر تک موسیقی کی محفل منعقد ہوگی جو کہ رات گئے تک جاری رہے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں